--------------------------------------------------------------------------------------------------------------------------------------------------
Home » » پڈعیدن میں بیواہ اور ایک سالہ یتیم بچے کے ساتھ ظلم

پڈعیدن میں بیواہ اور ایک سالہ یتیم بچے کے ساتھ ظلم

Written By Munawar Hussain on Monday, 22 January 2018 | January 22, 2018

 پڈعیدن ٹاون کی رہائشی ایک سالہ بچے کی ماں، بیوہ شمیم راجپوت نے سسرالیوں کے ظلم وستم پر پریس کانفرنس کرتے ہوئے صحافیوں کو بتایا کہ چند ماہ قبل میرے شوہر اشفاق راجپوت کا روڈ حادثہ میں انتقال ہوگیا شوہر کی وفات کے بعد میری ساس اور دس سے زائد دیوروں نے جائیداد کی لالچ میں مجھ پر سخت تشدد کیا اور میرے گھر پر قبضہ کرنے کے بعد لا کرز توڑ کر 10 تولہ زیورات اور دیگر قیمتی سامان بھی لوٹ لیا میرا شوہر ٹرانسپورٹر تھا اور پڈعیدن نواب شاہ روٹ پر اسکی پانچ مسافر وینیں بھی چلتی تھی ان وینوں پر دیوروں نے قبضہ کرلیا ہے شمیم راجپوت نے بتایا کہ میرے والدین نے مجھے شادی پر مکان تحفہ میں دیا تھا جس پر وہ لوگ قابض ہیں میرا ایک سال کا بیٹا ہے جسے لئے میں در بدر کی ٹھوکریں کھا رہی ہوں سر چھپانے کی کوئی جگہ نہیں اور کوئی انصاف دلانے والا بھی نہیں انصاف کیلئے پڈعیدن تھانہ پر پہنچی اور پولیس کے ہمراہ مکان سے قبضہ ختم کرانے کی کوشش کی تو میرے سسرالیوں نے مجھ پر حملہ کرنے کی کوشش کی پولیس SHO کے سامنے مجھے گالیاں دی گئی اور پولیس خاموش تماشائی بنی رہی انہوں نے کہا کہ پولیس ملزمان سے ملی ہوئی ہے بیوہ نے چیف جسٹس آف پاکستان، آئی جی پولیس سندھ ، اور SSP نوشہروفیروز سے مطالبہ کیا ہے کہ مجھے اور میرے معصوم یتیم بچے کے ساتھ انصاف کیا جائے اور مجھے میرا حق دلوایا جائے بصورت دیگر معصوم بچے کے ساتھ خود سوزی کر لونگی۔ 

0 comments:

Post a Comment